برتنوں کے احکام

مسئلہ٦١:اگر کُتّے، سور، یا مردار کے چمڑے سے برتن بنایا جاۓ تو اس میں کھانا پینا حرام ہے۔ اور اس سے وضوء اور غسل وغیرہ بھی نہیں کیاجاسکتا ۔

مسئلہ٦٢:سونے چاندی کے برتنوں میں کھانا پینا حرام ہے۔

مسئلہ٦٣:ایسے برتنوں کا استعمال کہ جس پر سونے یاچاندی کا پانی چڑھا ہو جائز ہے۔

مسئلہ٦٤:حُقّے کی چلم کا ڈھکن، تلوار اور چھری کا غلاف اور قرآن کا جزدان اگر سونے چاندی کا ہو تو کوئ اشکال نہیں ہے۔

مسئلہ٦٥:مجبوری کی حالت میں سونے اور چاندی کے برتنوں کا استعمال محل اشکال نہیں ہے۔مگر وضوء اور غسل کرنا مجبوری کی حالت میں بھی جائز نہیں ہے۔

مسئلہ٦٦:اس برتن کے استعمال میں کوئ حرج نہیں ہے جس کے متعلق یہ علم نہ ہو کہ یہ کس چیز سے بنا ہے۔